Play Copy
ﯚﯛﯜﯝﯞﯟﯠﯡﯢﯣﯤﯥﯦﯧﯨﯩﯪﯫﯬﯭﯮﯯﯰﯱﯲﯳﯴﯵﯶﯷﯸﯹﯺﯻﯼﯽﯾﯿﰀﰁﰂﰃﰄﰅﰆﰇﰈﰉﰊﰋﰌﰍﰎﰏﰐ

95. اے ایمان والو! تم احرام کی حالت میں شکار کو مت مارا کرو، اور تم میں سے جس نے (بحالتِ احرام) قصداً اسے مار ڈالا تو (اس کا) بدلہ مویشیوں میں سے اسی کے برابر (کوئی جانور) ہے جسے اس نے قتل کیا ہے جس کی نسبت تم میں سے دو عادل شخص فیصلہ کریں (کہ واقعی یہ جانور اس شکار کے برابر ہے بشرطیکہ) وہ قربانی کعبہ پہنچنے والی ہو یا (اس کا) کفّارہ چند محتاجوں کا کھانا ہے (یعنی جانور کی قیمت کے برابر معمول کا کھانا جتنے بھی محتاجوں کو پورا آجائے) یا اس کے برابر (یعنی جتنے محتاجوں کا کھانا بنے اس قدر) روزے ہیں تاکہ وہ اپنے کیے (کے بوجھ) کا مزہ چکھے۔ جو کچھ (اس سے) پہلے ہو گزرا اللہ نے اسے معاف فرما دیا، اور جو کوئی (ایسا کام) دوبارہ کرے گا تو اللہ اس سے (نافرمانی) کا بدلہ لے لے گا، اور اللہ بڑا غالب بدلہ لینے والا ہےo

95. O believers! Do not kill game whilst you are in pilgrim attire (ihram). Whoever of you (pilgrim-clad) kills it intentionally will recompense (it) in kind of cattle equivalent to the one he has killed. In this regard, two men of probity out of you are to judge (whether this animal is really the game’s equal, provided) that offering is to be brought to the Ka‘ba. Or its atonement is feeding a few indigent persons (i.e., usual food for the number of poor people manageable in the animal’s cost), or fasting corresponding to that (number of days manageable within the same food meant for the poor,) so that he tastes (the gravity of) his offence. Allah has forgiven whatever has gone by earlier (to it), but whoever repeats (a similar act) Allah will avenge (his defiance). And Allah is Mighty, the Lord of Retribution.

(al-Mā’idah, 5 : 95)