اس سورہ پاک کا نام ’سبا‘ ہے۔ یہ سورہ مکی ہے۔ سورہ کی ابتدا حمد باری تعالیٰ سے کی جا رہی ہے اور اس کی کبریائی اور عظمت کا اعلان کیا جا رہا ہے۔ نیز بتا دیا کہ حضور نبی رحمت محمد مصطفی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی بعثت تمام نوع انسانی کے لئے تا قیام قیامت حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) راہنما بن کر تشریف لے آئے ہیں۔ حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے بعد نہ کسی نئے نبی کی ضرورت ہے اور نہ ہی کوئی نیا نبی مبعوث ہوگا۔

Play Copy

یَعۡلَمُ مَا یَلِجُ فِی الۡاَرۡضِ وَ مَا یَخۡرُجُ مِنۡہَا وَ مَا یَنۡزِلُ مِنَ السَّمَآءِ وَ مَا یَعۡرُجُ فِیۡہَا ؕ وَ ہُوَ الرَّحِیۡمُ الۡغَفُوۡرُ ﴿۲﴾

2. وہ اُن (سب) چیزوں کو جانتا ہے جو زمین میں داخل ہوتی ہیں اور جو اس میں سے باہر نکلتی ہیں اور جو آسمان سے اترتی ہیں اور جو اس میں چڑھتی ہیں، اور وہ بہت رحم فرمانے والا بڑا بخشنے والا ہےo

2. He knows (all) the things that go into the earth and that come out from it and those that descend from heaven and that ascend to it. And He is Ever-Merciful, Most Forgiving.

(سَبـَا، 34 : 2)