اس سورت پاک کا نام النمل ہے۔ اس سورت کا تعلق بھی مکی زندگی کے درمیانی عہد سے ہے۔ اس سورت میں اہل ایمان کے لیے مژدہ رحمت، ایمان بالآخرت کی اہمیت اور سیدنا سلیمان علیہ السلام کی سیرت بیان کی گئی ہے۔

Play Copy

اَمَّنۡ یُّجِیۡبُ الۡمُضۡطَرَّ اِذَا دَعَاہُ وَ یَکۡشِفُ السُّوۡٓءَ وَ یَجۡعَلُکُمۡ خُلَفَآءَ الۡاَرۡضِ ؕ ءَ اِلٰہٌ مَّعَ اللّٰہِ ؕ قَلِیۡلًا مَّا تَذَکَّرُوۡنَ ﴿ؕ۶۲﴾

62. بلکہ وہ کون ہے جو بے قرار شخص کی دعا قبول فرماتا ہے جب وہ اسے پکارے اور تکلیف دور فرماتا ہے اور تمہیں زمین میں(پہلے لوگوں کا) وارث و جانشین بناتا ہے؟ کیا اللہ کے ساتھ کوئی (اور بھی) معبود ہے؟ تم لوگ بہت ہی کم نصیحت قبول کرتے ہوo

62. Or, Who grants the supplication of the anxiety-stricken caller when he calls upon Him, and Who removes the trouble and makes you successors and inheritors (of the predecessors) in the earth? Is there any (other) God besides Allah? You people accept advice but little.

(النَّمْل، 27 : 62)