سورہ الصافات ہے جو پہلی آیت میں مذکور ہے۔ یہ سورہ مکہ مکرمہ میں نازل ہوئی۔ سورہ کا آغاز عقیدہ توحید کو دلوں میں جاگزیں کرنے کے لیے تین قسمیں کھا کر فرمایا جا رہا ہے کہ تمہارا خدا بس ایک خدا ہے اس کا کوئی شریک نہیں۔ آسمانوں اور زمین اور جو کچھ ان میں ہے سب کا وہی پرور دگار ہے۔ اہل مکہ کو تنبیہ فرمادی کہ آج جس کو تم کمزور سمجھ رہے ہو، سارے عرب پر اس کا پرچم لہرائے گا اور سارے عالم کو اسی کے دامن رحمت میں جگہ ملے گی۔

Play Copy

وَ مَا مِنَّاۤ اِلَّا لَہٗ مَقَامٌ مَّعۡلُوۡمٌ ﴿۱۶۴﴾ۙ

164. اور (فرشتے کہتے ہیں:) ہم میں سے بھی ہر ایک کا مقام مقرر ہےo

164. And (the angels say:) ‘Every one of us has an appointed station;

(الصَّافَّات، 37 : 164)