اس سورہ پاک کا نام ’سبا‘ ہے۔ یہ سورہ مکی ہے۔ سورہ کی ابتدا حمد باری تعالیٰ سے کی جا رہی ہے اور اس کی کبریائی اور عظمت کا اعلان کیا جا رہا ہے۔ نیز بتا دیا کہ حضور نبی رحمت محمد مصطفی (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کی بعثت تمام نوع انسانی کے لئے تا قیام قیامت حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) راہنما بن کر تشریف لے آئے ہیں۔ حضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے بعد نہ کسی نئے نبی کی ضرورت ہے اور نہ ہی کوئی نیا نبی مبعوث ہوگا۔

Play Copy

وَ لَوۡ تَرٰۤی اِذۡ فَزِعُوۡا فَلَا فَوۡتَ وَ اُخِذُوۡا مِنۡ مَّکَانٍ قَرِیۡبٍ ﴿ۙ۵۱﴾

51. اور اگر آپ (ان کا حال) دیکھیں جب یہ لوگ بڑے مضطرب ہوں گے، پھر بچ نہ سکیں گے اور نزدیکی جگہ سے ہی پکڑ لئے جائیں گےo

51. And if you visualize (their plight), when they will be most upset, they will not then be able to escape, and will be seized from a nearby place.

(سَبـَا، 34 : 51)